کاروبار

فکر وخیالات

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

کیا اب وکاس دوبے کے ساتھیوں کو بچا رہی ہے یوپی پولس؟

وکاس دوبے کو دولاکھ نقدی اور 25 کارتوس پہنچانے والے جئے واجپئی کو نظیرآباد پولس نے پہلے چھوڑدیا ،سوشل میڈیا پر ہنگامہ آرائی کے بعد پھر کیا گرفتار

Administrators

ہماری دنیا بیورو

کانپور ، 20 جولائی۔ بیکروپولس قتل معاملہ میں وکاس دوبے کا معاون جئے واجپئی سے اتوار کی دیررات نظیرآباد تھانے میں کئی گھنٹوں تک پوچھ گچھ کی گئی۔ ایس ایس پی بھی موقع پر موجود تھے۔اس کے بعد یہ پتہ چلا ہے کہ جے نے واقعہ کے دودن پہلے وکاس دوبے کو دو لاکھ روپے اور25کارتوس دیئے تھے۔ اس معاملے میں جئے کے ایک معاون کو بھی پولس نے دبوچ لیا ہے۔ اس کے بعد نظیرآباد پولس نے جئے واجپئی اور اس کے معاون کے خلاف تھانے میں مقدمہ درج کیا۔ بیکروپولس قتل معاملے کے بعد وکاس دوبے کے سب سے قریبی جئے واجئپی کو پولس نے حراست میں لیا تھا۔15دن بعد اتوارکی شام وہ جب محفوظ طریقے سے گھر پہنچا تو اس کو لے کر سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہوگیا۔

سوالوں سے گھری نظیرآباد پولس دیررات دوبارہ جئے کو اس کے گھر سے حراست میں لے کر تھانے لائی۔ تھانے پہنچے ایس ایس پی دنیش کمارپی اور ایس ٹی ایف افسروں نے اس سے پوچھ گچھ کی۔پوچھ گچھ میں یہ پتہ چلا ہے کہ جئے نے واقعہ کے دو دن پہلے وکاس دوبے کو دولاکھ روپے اور25کارتوس دیئے تھے۔ چارجولائی کو جئے واجپئی اپنے ساتھی آریہ نگر رہائشی پرشانت شکلا عرف ڈبو کے ساتھ تین لگزری گاڑیوں میں وکاس دوبے اور اس کے معاونین کو شہر سے محفوظ نکال رہا تھا، لیکن پولس کی سخت سیکورٹی کی وجہ سے اس کام کو انجام نہیں دے سکا۔ وجئے نگر چوراہے پر تینوں کار چھوڑ کر بھاگ کھڑے ہوئے۔ ایس ایس پی کے مطابق پولس نے دو جولائی کے واقعہ میں سازش کے الزام میں جئے واجپئی اور ساتھی پرشانت شکلا کے خلاف نظیرآباد تھانے میں مقدمہ درج کیا ہے۔بتایا جارہا ہے کہ ملزم کو عدالت میں پیشی کے بعد جیل بھیجا گیا ہے۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.