کاروبار

فکر وخیالات

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

ٹرمپ پر’سنک‘ سوار، ایران کے ان اہم ٹھکانوں کو نشانہ بنانے کی دھمکی

Administrators

واشنگٹن،05جنوری(ایجنسی)۔
 امریکہ نے گزشتہ جمعہ بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ہوائی حملہ کیا تھا۔ اس حملے میں ایران کی رولیوشینری گارڈ کاپرس (آئی آرجی سی ) کے سربراہ اور اس علاقائی سیکورٹی کے نظام کے سربراہجنرل قاسم سلیمانی کی موت ہو گئی۔امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے حکم پر یہ فضائی حملے کئے گئے تھے۔ ٹرمپ کی جانب سے کہا گیا کہ مبینہ طور پر ایران کی طرف سے مستقبل میں کئے جا نے والے ممکنہ حملوں کو روکنے کے لئے اس کارروائی کو انجام دیا گیا، جس کے بعد ایران نے سخت لہجے میں امریکہ کو سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکی دے ڈالی۔ اب ٹرمپ نے جواب دیتے ہوئے تین ٹویٹ کئے ہیں اور کہا ہے کہ اگر کسی بھی امریکی شہری اور املاک پر ایران نے حملہ کیا تو ان کی جانب سے ایران کی 52 انتہائی خاص جگہوں پر حملہ کیا جائے گا۔

امریکی فوجی ٹھکانہ اور سفارت خانہ پر راکٹ حملہ، کیا ایران نے بدلے کی کارروائی شروع کردی؟

ڈونالڈ ٹرمپ نے ٹویٹ کیاکہ ایران بدلہ لینے کی بات کہتے ہوئے امریکہ کو نقصان پہنچانے کی بات کر رہا ہے۔ ہم نے دہشت گردی کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے ا س دہشت گرد لیڈر کو نشانہ بنایا، جس نے حال ہی میں ایک امریکی کو مار ڈالا تھا اور کئیلوگ بری طرح زخمی کر دیا تھا، ان لوگوں کے بارے میں نہیں بتا رہا ہوں جن لوگوں کو اس نے اپنی زندگی میں مار ڈالا، اس میں سینکڑوں ایرانی مظاہرین بھی تھے۔

سلیمانی کی شہادت کا ایران اپنے سب سے بڑے دشمن سے کیسے لے گا بدلہ؟

امریکی صدر نے آگے لکھاکہ وہ پہلے سے ہی ہمارے سفارت خانے پر حملہ کر رہا تھا اور وہ ہمارے دیگر ٹھکانوں پر حملے کی تیاری کر رہا تھا۔ ایران کئی سالوں سے صرف مسئلہ ہی بنا ہوا ہے۔ اسے انتباہ کے طور پر ہی سمجھا جائے کہ اگر ایران ہمارے کسی بھی شہری یا پھر ہماری امریکی اسٹیٹ پر حملہ کرتا ہے تو ہم ایران کے 52 انتہائی اہم ٹھکانوں (52 اس لئے کیونکہ کافی سال پہلے ایران نے 52 امریکی شہریوں کو یرغمال بنایا تھا) پر حملہ کریں گے، ان میں سے کچھ ٹھکانے ثقافتی لحاظ سے ایران کے لئے انتہائی خاص ہیں۔ ہم بہت جلد اور پوری طاقت سے حملہ کریں گے، امریکہ اب کوئی اور دھمکی نہیں چاہتا۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.