کاروبار

فکر وخیالات

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

بہار الیکشن : لالو کی غیر موجودگی میں اس شخص نے کی تیجسوی کی سیاسی پرورش،کیا آپ جاننا چاہیں گے؟

Administrators

پٹنہ،25اکتوبر(ایچ ڈی بیورو)۔

اس مرتبہ بہار کے انتخابات میں وزیر اعلی نتیش کمارکی ساکھ داو پر لگ گئی ہے۔ اس انتخابات میں ان کے لئے سب سے بڑا خطرہ کوئی اور نہیں بلکہ آر جے ڈی کے سربراہ اور گرینڈ الائنس سے تعلق رکھنے والے وزیراعلیٰ کے امیدوار تیجسوی یادو ہیں۔ 2015 میں لالو پرساد یادو کی قیادت میں لڑنے کے بعد تیجسوی اس بار اکیلے ہی الگ رنگ میں نظر آرہے ہیں جو نتیش کے لئے چیلنج بنے ہوئے ہیں۔

sanjay yadav.jpg

ماہرین کا خیال ہے کہ تیجسوی کی یہ بدلی ہوئی اور جارحانہ شبیہ کے پیچھے ان کے سیاسی مشیر سنجے یادو ہیں ، جو لالو کی عدم موجودگی میں تیجسوی کو سماجواد کاالف با سکھارہے ہیں۔ بنیادی طور پر ہریانہ سے تعلق رکھنے والے ، سنجے یادو خود ایک سیاسی خاندان سے آتے ہیں۔ سنجے اور تیجسوی ایک دوسرے کو کرکٹ کھیلنے کے دنوں سے جانتے ہیں۔ وہ اس سے پہلے اترپردیش کے وزیراعلیٰ اکھلیش یادو کے ساتھ بھی کام کرچکے ہیں۔ لیکن تیجسوی یادو کے ساتھ ان کا کام الگ طرح کاہی رہا ہے۔ لالو پرساد یادو کے جیل جانے کے بعد سے تیجسوی کو سماجوادی سیاست کے بارے میں بہتر طریقے سے سمجھایا ہے۔

آر جے ڈی کی طرف سے راجیہ سبھارکن پارلیمنٹ منوج کمار جھا کے ساتھ سنجے یادو تیجسوی کے چیف صلاح کاروں میں سے ایک رہے ہیں۔ آر جے ڈی رہنماوں کا کہنا ہے کہ یہ سنجے ہی تھے جنہوں نے2015کے اسمبلی انتخابات سے ٹھیک پہلے پارٹی کی توجہ سنگھ سربراہ موہن بھاگوت کے ریزرویشن کا جائزہ لینے والے بیان پر دلایا تھا۔بتایا جاتا ہے کہ سنجے نے اس بیان کو لالو کو دکھایا تھا۔ اور یقینی بنایا تھا کہ بھاگوت کا یہ بیان بی جے پی کے خلاف استعمال کیا جاسکتا ہے۔

 

You May Also Like

Notify me when new comments are added.